Latest News

جغرافیائی طور پر کشمیر ہمارے ساتھ، جذباتی طور پر نہیں: ادھیر رنجن چودھری

جغرافیائی طور پر کشمیر ہمارے ساتھ، جذباتی طور پر نہیں: ادھیر رنجن چودھری

نئی دہلی:  لوک سبھا میں کانگرس   لیڈر  ادھیر رنجن چودھری نے جمعہ کو مودی حکومت پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ آپ اس طرح سے کشمیر پر حکومت نہیں کر سکتے۔ جمعرات کی رات کو جموں کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی پر پبلک سیفٹی قانون  ( پی ایس اے )لگا دیا گیا۔ پی ایس اے لاگو ہونے کے بعد اب ان دونوں لیڈروں کو بغیر کسی مقدمے کے دو سال تک حراست میں رکھا جا سکتا ہے۔
محبوبہ اور عمر پر  پی ایس اے کے بعد کانگرس نے مودی حکومت پر نشانہ لگایا۔ آج ایوان میں رنجن بولے کہ کل وزیر اعظم نریندر مودی نے پارلیمنٹ میں عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی کے بارے میں تبصرہ کیا اور رات میں ان پر پبلک سیفٹی ایکٹ  ( پی ایس اے )لگا دیا گیا، آپ  اس طرح سے کشمیر پر راج نہیں کر سکتے۔
ادھیر رنجن نے کہا کہ کشمیر جغرافیائی طور پر تو ہمارا ہے لیکن جذباتی طور پر نہیں۔ وہیں اس سے پہلے کانگرس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم نے بھی جموں و کشمیر کے سابق وزرائے اعلیٰ کے خلاف پبلک سیفٹی قانون  ( پی ایس اے )کے تحت مقدمہ درج کئے جانے پر تنقید کرتے ہوئے جمعہ کو کہا کہ بغیر کسی الزام کے کارروائی کرنا جمہوریت میں ایک گھٹیا قدم ہے۔ انہوں نے ٹویٹ کیا کہ عمر عبداللہ، محبوبہ مفتی اور دیگر کے خلاف پی ایس اے کی ظالمانہ کارروائی سے حیران ہوں۔الزامات کے بغیر کسی پر کارروائی جمہوریت میں سب سے  گھٹیا قدم ہے۔
 



Comments


Scroll to Top