National News

اے اے پی نے 3500 مقامات پر بی جے پی ایم سی ڈی کے خلاف علامتی مظاہرہ کیا

اے اے پی نے 3500 مقامات پر بی جے پی ایم سی ڈی کے خلاف علامتی مظاہرہ کیا

نئی دہلی:  دسہرہ کے موقع پر عام آدمی پارٹی (اے اے پی) نے منگل کو راجدھانی میں 3500 مقامات پر کچرے کے راون جلا کر بی جے پی کی حکومت کے خلاف علامتی احتجاج کیا۔

براڑی سے عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے سنجیو جھا نے کہا کہ گزشتہ 15 سالوں میں کارپوریشن نے دہلی کو کچرے کا شہر بنا دیا ہے۔ حال ہی میں ملک کے 45 شہروں کا صفائی کا سروے کیا گیا اور اس میں دہلی 37 ویں نمبر پر ہے۔ حیرت کی بات ہے کہ دہلی ملک کی راجدھانی ہے اور بی جے پی نے اسے گندگی کا گھر بنا رکھا ہے۔ دہلی کی پوری عوام کا ماننا ہے کہ 15 سالوں میں بی جے پی کارپوریشن نے دہلی کو صرف کچرا دیا ہے۔ اس کی مخالفت میں آج ہم نے کچرے کا راون جلایا ہے۔ یہ احتجاج بی جے پی کے لیے کمبھ کرن کی نیند سے بیدار ہونے اور یہ سمجھانے کا ایک طریقہ ہے کہ انھوں نے دہلی کے ساتھ کیا کیا ہے۔ 
کالکا جی سے عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے آتشی نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی ایم سی ڈی میں گزشتہ 15 سالوں سے حکومت کر رہی ہے۔ انہوں نے پوری دہلی کو کچرے میں تبدیل کر دیا ہے۔ جب آپ دہلی میں داخل ہوتے ہیں تو کچرے کے تین بڑے پہاڑ آپ کا استقبال کرتے ہیں۔ ہر روز ان پہاڑوں میں آگ لگتی ہے۔ وہاں مچھر بہت ہیں، پانی میں کیڑے مکوڑے ہیں، آلودگی ہے۔ اوکھلا میں قریب ہی کچرے کا پہاڑ ہے اور اب بی جے پی اس کے قریب کچرے کا ایک نیا پہاڑ بنانے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ دہلی کے لوگ پریشان ہیں، وہ اپنے شہر کا کچرا نہیں چاہتے۔ جس طرح راون کو جلایا گیا ہے، اسی طرح لوگوں نے اپنا ذہن بنا لیا ہے کہ بی جے پی کو کارپوریشن سے جلانا ہے۔ جس طرح کیجریوال نے بجلی، پانی، اسپتال ٹھیک کیا ہے، اگر ایم سی ڈی میں بھی عام آدمی پارٹی ہوگی تو دہلی صاف ہوجائے گا۔ 
راجندر نگر کے ایم ایل اے درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی ایم سی ڈی میں پچھلے 15 سالوں سے حکومت کر رہی ہے۔ میرے پاس ہر جگہ ایسا کچرا ہے۔ پہلے ہی کچرے کے تین پہاڑ بنانے سے بی جے پی مطمئن نہیں تھی، اس لیے اب 16 نئے کچرے کے پہاڑ بنائے جا رہے ہیں۔ آج پوری دہلی کے لوگ جمع ہیں اور 3500 سے زیادہ جگہوں پر کچرے کے راون جل رہے ہیں۔ یہ ایک علامتی مظاہرہ ہے جو ہم بی جے پی کے کچرے کے خلاف کر رہے ہیں۔



Comments


Scroll to Top