DALIT YOUTHS

واہ رے پولیس: نوجوان کو گھر سے چوکی اٹھا کر بے دردی سے  پیٹا

واہ رے پولیس: نوجوان کو گھر سے چوکی اٹھا کر بے دردی سے  پیٹا

امرتسر : نوجوان کے اہل خانہ نے غیر قانونی تحویل میں رہنے کے بعد بری طرح سے مار پیٹ کے بعد لڑکے کو گھر سے باہر پھینک دینے کے معاملے میں آج رات دیر گئے پولیس تھانے  کا گھیراؤ کیا۔ لوگوں نے اس نوجوان کا طبی معائنہ کرنے کا مطالبہ کیا۔دیر  رات  کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے اے سی پی منگل سنگھ نے سول ہسپتال سے نوجوان کا میڈیکل چیک اپ کروانے کی ہدایت دی

23 May,2020
راجستھان: چوری کے الزام میں دلت  لڑکوں سے مار - پیٹ، راہل گاندھی  نے گہلوت حکومت سے فوراً کارروائی کرنے کو کہا

راجستھان: چوری کے الزام میں دلت  لڑکوں سے مار - پیٹ، راہل گاندھی  نے گہلوت حکومت سے فوراً کارروائی کرنے کو کہا

نئی دہلی: کانگرس کے سابق صدر راہل گاندھی نے راجستھان کے ناگور میں دو دلت نوجوان مردوں کے ساتھ مبینہ طور پر ہوئی بربریت کی موجودگی کو ''''خوفناک اور  لرزہ خیز '''' قرار دیتے ہوئے جمعرات کو ریاست کی اشوک گہلوت حکومت سے کہا کہ وہ اس معاملے میں فوری کارروائی کرے۔

20 February,2020
میرٹھ میں پھر لگے  '' پاکستان زندہ باد ''کے نعرے، پولیس نے لڑکے کو گرفتار

میرٹھ میں پھر لگے  '' پاکستان زندہ باد ''کے نعرے، پولیس نے لڑکے کو گرفتار

میرٹھ: شہریت ترمیمی قانون کو لے کر میرٹھ میں  گزشتہ دنوں ہوئے پرتشدد احتجاج کے بعد اگرچہ ماحول عام کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے مگر فسادی ماحول کو مسلسل خراب کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں

04 January,2020
کشمیر میں فوج میں بھرتی کے لئے نوجوان پر جوش، 40 ہزار افراد نے دی درخواست

کشمیر میں فوج میں بھرتی کے لئے نوجوان پر جوش، 40 ہزار افراد نے دی درخواست

جموں:فوج میں بھرتی ہونے کے لئے کشمیر میں نوجوان کافی پر جوش نظر آ ر ہے ہیں اور ریاست کے تین اضلاع میں 40 ہزار سے زائد نوجوانوں نے فوج میں بھرتی ہونے کی درخواست دے کر اپنے جوش و خروش کا تعارف کرایا ہے۔ مرکز کے زیر انتظام علاقہ جموں و کشمیر کے ضلع سانبہ میں چل رہی فوج کی بھرتی کے لئے 40 ہزار سے زائد نوجوانوں نے رجسٹریشن کرایا ہے

03 November,2019
گاندھی کا ''ہے رام '' ''جے شری رام ''نہیں تھا: نوجوان مصنفین

گاندھی کا ''ہے رام '' ''جے شری رام ''نہیں تھا: نوجوان مصنفین

نئی دہلی: بابائے قوم مہاتما گاندھی گئو رکشا کے حامی ضرور تھے لیکن گائے  کے  تحفظکے نام پر انسانوں کے قتل کئے جانے کے سخت مخالف تھے۔ ان کے'''' ہے رام ''''اورآج کے ''''جے شری رام'''' میں بہت فرق ہے۔ وہ اقلیتی برادری کو لے کر بہت فکر مند رہتے تھے خواہ وہ بھارت کے مسلمان ہو ں یا پاکستان کے ہندو۔ انہوں نے مذہب کی بنیاد پر کسی کے ساتھ امتیازی سلوک نہیں کیا۔

13 October,2019

Scroll to Top